Sahih al-Bukhari 5001

Narrated 'Alqama: While we were in the city of Hims (in Syria), Ibn Masud recited Surat Yusuf. A man said to him), “It was not revealed in this way.” Then Ibn Masud said, "I recited it in this way before Allah’s Apostle and he confirmed my recitation by saying, ‘Well done!’ " Ibn Masud detected the smell of wine from the man’s mouth, so he said to him, “Aren’t you ashamed of telling a lie about Allah’s Book and (along with this) you drink alcoholic liquors too?” Then he lashed him according to the law.

مجھ سے محمد بن کثیر نے بیان کیا، کہا ہم کو سفیان ثوری نے خبر دی، انہیں اعمش نے، انہیں ابراہیم نخعی نے، ان سے علقمہ نے بیان کیا کہ

ہم حمص میں تھے ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے سورۃ یوسف پڑھی تو ایک شخص بولا کہ اس طرح نہیں نازل ہوئی تھی۔ ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے کہا کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے سامنے اس سورت کی تلاوت کی تھی اور آپ نے میری قرآت کی تحسین فرمائی تھی۔ انہوں نے محسوس کیا کہ اس معترض کے منہ سے شراب کی بدبو آ رہی ہے فرمایا کہ اللہ کی کتاب کے متعلق جھوٹا بیان اور شراب پینا جیسے گناہ ایک ساتھ کرتا ہے۔ پھر انہوں نے اس پر حد جاری کرا دی۔

حدثني محمد بن كثير، اخبرنا سفيان، عن الاعمش، عن إبراهيم، عن علقمة، قال:" كنا بحمص، فقرا ابن مسعود سورة يوسف، فقال رجل: ما هكذا انزلت، قال: قرات على رسول الله صلى الله عليه وسلم، فقال: احسنت، ووجد منه ريح الخمر، فقال: اتجمع ان تكذب بكتاب الله وتشرب الخمر، فضربه الحد".